بائی پولر ڈِس آرڈر

3

اِس کے بالکل برعکس جب ایک بائی پولر مریض ڈپریشن یا اُداسی میں مُبتلا ہوتا ہے تو اپنے آپ کو نارمل اور بُلند رکھنے کے لیے مختلف نشوں کا استعمال کرتا ہے۔ شراب یا کسی بھی نشے، جیسا کہ افیون ملی درد سے نجات دلانے والی ادویات کا استعمال، بے حسی طاری کرنے اور ڈپریشن کی علامات کو کم کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ بعض افراد کے مطابق نشہ بے خوابی اور بے چینی کے مسائل دور کرنے میں بھی مددگار ثابت ہوتا ہے۔ بائی پولر ڈس آرڈر میں مبتلا افراد میں سے تقریباً چھپن (56) فیصد افراد نشہ اور شراب کے عادی پائے گئے ہیں۔ بائی پولر مریضوں میں زیادہ تر مقبول نشہ میں شراب ، بھانگ، افیم، کوکین، مسکن ادویات اور(Amphetamines) ایم فیٹا ماہنز شامل ہیں۔ زیادہ تر منشیات کو شراب کے ساتھ ملاِ کے استعمال کیا جاتا ہے تاکہ زیادہ بلند اثرات حاصل ہو سکیں۔ (Self Medicating) خود سے دوا لینے والے رویے کے علاوہ کمزور فیصلے اور تحریک بھی بائی پولر مریضوں میں نشہ کی وجہ کا باعث ہو سکتے ہیں۔
bipolar31بائی پولر ڈس آرڈر میں مبتلا افراد Self Medicating رویے کی وجہ سے نشہ کا شکار ہونے کی خاصی صلاحیت رکھتے ہیں۔ لیکن بعض صورتوں میں نشہ کی زیادتی کی وجہ سے بائی پولر ڈس آرڈر کی علامات پیدا ہو جاتی ہیں۔ نشہ کے باعث ہونے والے بائی پولر ڈس آرڈر کو مزاج میں خلل کے طور پر بیان کیا جا سکتا ہے جو کہ شراب اور نشہ کی زیادتی کی وجہ سے پیدا ہوتا ہے۔ ایسی صورتوں میں، بائی پولر کی علامات کسی مبینہ نشہ کے استعمال سے پہلے موجود نہیں ہوتی ہیں۔ مگر نشے میں یا نشہ اُترنے کے ایک مہینے کے اندر یا بعد میں صاف طور پر ظاہر ہو جاتی ہیں اور نشہ چھوڑنے کے چند ہفتوں کے بعد کم ہو جاتی ہیں۔ جن مریضوں میں بائی پولر ڈس آرڈر پہلے سے بنیادی طور پر موجود ہو، اُن میں نشہ کے استعمال سے مزاج کی علامات فوری طور پر ظاہر ہونے لگتی ہیں۔ اگرچہ وہ پہلے کبھی نمودار نہیں ہوئی تھیں۔ بائی پولر کی علامات نشہ کے دوران یا نشہ اُترتے وقت زیادہ بڑھ جاتی ہیں۔ (Mood Disorder) مزاج کے ڈس آرڈر کے ایک مضبوط خاندانی پسی منظر اور مریض کی تاریخ (History) میں کم از کم ایک چھوٹا سا جنون (Mania) یا ڈپریشن کا واقعہ بنیادی (Mood Disorder) موڈ ڈس آرڈر کی تشخیض کر سکتا ہے۔

جن افراد میں بائی پولر ڈس آرڈر اور شراب اور نشے کی دوہری تشخیص ہو چکی ہو انہیں اپنی زندگی میں مختلف مقامات پر مشکلات کا سامنا ہوتا ہے اور اپنی بیماری کی وجہ سے اپنے خاندان اور دوستوں کے ساتھ اُن کے تعلقات شدید خطرے میں پڑ جاتے ہیں۔ایسے مریضوں کے رویے کے مسائل سکولوں، یونیورسٹیوں اور بااختیار افراد کے ساتھ مشکلات پیدا کر سکتے ہیں۔ ایسے لوگ پرُ خطر رویے کا شکار ہوتے ہیں اور کیمیائی انحصار اور ایک سے زیادہ نفسیاتی علامات جیسے کہ خودکشی کی وجہ سے ہسپتال میں ایک سے زائد دفعہ داخل ہو سکتے ہیں۔ جن افراد میں ایک سے زائد Disorders ڈسِ آرڈر (انتشار) اکھٹے پائے جاہیں وہ سنگین قانونی مسائل سے اکژ دوچار رہتے ہیں اور عموماً قید بھی کاٹتے ہیں۔

کچھ افراد کے بعض نشوں کی لت میں مبتلا ہونے کی وجہ اُن کی قوتِ برداشت میں اضافہ ہوتا ہے۔ جب لوگ ایک خاص قسم کا نشہ خوشی حاصل کرنے کی غرض کے لیے نکلتے ہیں تو بہت ساری Dopamine خون میں چھوڑی جاتی ہے۔ Dopamine انسانی دماغ میں ایک کیمیائی جزُ ہے۔ جو کہ خوشی حاصل کرنے والے رویے سے منسلک ہے۔ جتنی زیادہ Dopamine فراہم ہو گی اُتنی زیادہ خوشی حاصل ہو گی۔ جب کوئی شخص نشے کی بڑی خوراک کا مسلسل استعمال کرتا ہے تو دماغ زیادہ مقدار میں Dopamine فراہم کرنے کا عادی ہو جاتا ہے اور اِس طرح اُسی نشے کی اُتنی ہی مقدار سے مطلوبہ اثر حاصل نہیں ہوتا۔ اُتنی ہی سطح کا اطمینان حاصل کرنے کے لیے پھر اُس افراد کو پہلے سے زیادہ خوراک استعمال کرنی پڑتی ہے۔ اِس طرح بائی پولر ڈس آرڈر والے لوگوں میں یہ چیز ایک دفعہ شروع ہو جائے تو پھر اُسے روکا نہیں جا سکتا جب تک کہ اُنہیں مناسب علاج نہ میسر آ جائے۔

  • 1
  • 2
  • 3
  • اگلا صفحہ:
  • 4

اپنی رائے یہاں لکھیئے:-

comments