بائی پولر ڈِس آرڈر

4

بائی پولر ڈس آرڈر اور نشہ کی دوہری تشخیص والے افراد کو زیادہ بد تر طبی کورس یا علاج سے گزرنا پڑتا ہے، اُن موڈ ڈسِ آرڈر (Mood Disorders) کے مقابلے میں جو کہ اکیلے کام کرتے ہیں۔ ایسے مریض جن میں دوہری تشخیص اور شراب پر انحصار پایا جاتا ہو وہ دوسرے ایسے مریضوں کے مقابلے میں دیر سے صحت یاب ہوتے ہیں جن میں یہ اکھٹے نہیں پائے جاتے۔ بائی پولر ڈسِ آرڈر، منشیات اور نشہ کی اکٹھی موجودگی علاج کو بہت زیادہ مشکل بنا دیتی ہے۔ جبکہ کسی ایک کا علاج آسان ہوتا ہے۔
bipolarr1دوہری تشخیص کے موثر علاج کے حوالے سے ابھی کافی تحقیق کی ضرورت ہے مگر پھر بھی موثر اور اہم علاج کے طریقہ کار تک کافی حد تک رسائی ممکن ہو چکی ہے۔ موڈ ڈس آرڈرکے لیے Pharmacotherapy کے میدان میں جدید ترقی ایسے لوگوں کے لیے بہت مفید ثابت ہوتی ہے۔ جو کہ دوہری تشخیص کا شکار ہیں، کیونکہ اِس علاج میں مُضر اور زہریلے اثرات کم پائے جاتے ہیں۔ حالیہ تجزیوں کے مطابق دوہری تشخیص والے ایسے افراد کے علاج، جن میں یہ امراض زیادہ پائے جاتے ہوں، کے لیے محضوحی تکنیکی (Therapeutic Techniques) پر بہت زور دیا گیا ہے۔

بائی پولر ڈس آرڈر کے علاج کی مدد سے نشہ اور شراب کی طلب میں کمی واقع ہوتی ہے۔ متعدد ادویات جسم سے زہریلا مادہ صاف کرنے میں مدد دیتی ہیں اور نشہ اور شراب کی طلب کو بھی کنڑول کرتی ہیں۔ اِسی طرح بہت ساری دوسری ادویات بائی پولر ڈسِ آرڈر کو کم کرنے اور اُس کی علامات کو کنڑول کرنے میں مدد کرتی ہیں۔ دونوں طرح کی ادویات کا صحت مند امتزاج دوہری تشخیص کے علاج میں مفید ثابت ہوتا ہے۔ دوائیوں کے ساتھ ساتھ بعض (Psychotherapentic Techniques) نفسیاتی تکنیکی علاج بھی ایسے مریضوں کے لیے کار آمد ثابت ہوتے ہیں۔ گروپ اور انفرادی تھراپی، خاندان کی تھراپی اور Cognitive Behavior تھراپی کو ملا کر دوہرے ڈسِ آرڈر کے افراد کا موثر علاج کیا جا سکتا ہے۔نفسیاتی تھراپی مریضوں کے رویے کے مسائل حل کرنے میں بھی مددگار ثابت ہوتی ہے اور انہیں اپنی زندگی کو منظم کرنے اور اپنے طرزِ عمل کو بدلنے میں بھی مدد دیتی ہے۔ ایسی تھراپی خاندان، دوستوں اور ساتھیوں کے ساتھ صحت مند تعلقات کو برقرار رکھنے میں مدد کرتی ہے۔

اپنی رائے یہاں لکھیئے:-

comments