جب کوئی گھر سے بھاگنا چاہے تو۔۔۔

2

اس وقت جوابدہ کیسے بنایا جائے؟
آپکا کوئی عزیز یا نو جوان بچہ گھر چھو ڑ کر جانے کی دھمکی دے رہا ہو تو آپ کو سیکھنے کی ضرورت ہے کہ اس موقع پر انہیں کیسے جوبداہ بنایا جائے؟ سب سے پہلی بات کسی کو جوبداہ بناتے وقت ذہن میں رکھنی ضروری ہے کہ “مت بناِئیں”۔ جی ہاں، اسکا مطلب کہ انہیں اس وقت جوابدہ مت بناِئیں کیونکہ آپ اس وقت جو بات چیت کریں گے اسکا نتیجہ ہی انکی جوابدہی ہو گی، کیونکہ فطری طور پر وہ بھی کسی ایسے اشارے کی تلاش میں ہوں گے جو انہیں خطرے کے لیے الرٹ رکھے گا۔ لہذا اس وقت آپ نیوٹرل رہیں۔ کیو نکہ جب اس موقع پر آپ کسی کو کہتے ہیں کہ آپ نے غلط کیا تو اس پر وہ ڈرا ہوا ہوتا ہے اور اپنے آپکو مزید شرمندگی سے بچانے کے لیے، جذباتی طور پر خود کو منقطع کرلیتا ہے اور یہ ہی وجہ ہوتی ہے کہ وہ اس وقت سچ سے نہیں بلکہ شرمندگی سے خوفزدہ ہوتے ہیں۔
یہاں پر شرمندگی یہ نہیں کہ وہ آپ کو کیسے دھوکہ دیتے ہیں بلکہ وہ کیسے خود کو دھوکہ دیتے ہیں۔ اسی لیے آپکا کام ہے کہ آپ ان سے جڑے رہیں تا کہ وہ خود سے جذباتی طور پر جڑیں رہیں۔ یہ ایک قدرتی عمل ہے کہ جب ہم محفوظ محسوس کرتے ہیں تو ہم سچ کو دیکھتے ہیں، اسکو مانتے ہیں اور جب ہم سچ کو مان لیتے ہیں تو ہم خود بخود ایمپتھی / ہمدردی محسوس کرتے ہیں اور جب ہم ایمپتھی محسوس کرتے ہیں تو ہم ذمہ داری لیتے ہیں، اسی طرح آپکا عزیز یا بچہ بھی لے گا۔ اس وقت ان سے جذباتی طور پر جڑ جاِئیں اور ان سے پوچھیں کہ انکو اس وقت کتنا تنائو / سٹرس ہے۔ یہ سب کرنے کا مطلب ہر گز یہ نہیں کہ انہیں اجازت مل جائے گی کہ وہ جو چاہیں کریں، حقیقت ادھر ہی رہے گی اور انکو اس کو مان کر ہی چلنا ہو گا۔

یہ بات ذہن میں رکھیں کی اگر آپکا مقصد صرف جوابدہی ہے تو وہ صرف خوف کو جگائے گا، ایمپتھی / ہمدردی کو نہیں۔ کیو نکہ بات چیت کبھی بھی مقصد نہیں ہوتا، بلکہ یہ تو بات چیت کے نتیجے کے طور پر ہو جاتی ہے۔ آپ کا مقصد ان سے جذباتی طور پر جڑے رہنا ہے اور جب وہ اس جذباتی تعلق کو محسوس کریں گے تو وہ ذمہ داری بھی لیں گے۔

بنیادی اصول:
۱۔ بہترین خیال کریں: اپنے عزیز یا جو ان کو بتائیں کہ آپ اس پر یقین رکھتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ
وہ کبھی بھی یہ نہ کرتا اگر کوئی بڑا مسئلہ نہ ہوتا۔
۲۔ جذباتی تعلق قاِئم کریں: ان سے پوچھیں کہ وہ اس وقت کیسا محسوس کر رہے ہیں؟
۳۔ نتاِ ئج کو دیکھیں: ان کی مدد کریں کہ وہ ان سب سے ایمپتھی / ہمدردی کریں جو کہ متاثرہ ہیں۔ ان میں یہ جذبہ جگائیں، کیونکہ جب تک وہ ایمپتھی / ہمدردی نہیں رکھیں گے وہ ذمہ داری نہیں لیں گے۔
۴۔ انہیں انکے چنائو کی ذمہ داری لینے دیں: انہیں اس بات کی نہایت عزت کے ساتھ اجازت دیں کہ وہ جو بھی کرنا چاہیں وہ انکا فیصلہ ہو گا اور اسکے نتا ئج کے ذمہ دار بھی وہ ہوں گے۔

بات چیت کے لیے کچھ مناسب باتوں کا خیال رکھنا لازمی ہے اور چند اہم اقدام اٹھانے ضروری ہے۔ بات چیت کے حوالے سے اہم نکات کو ذہن میں رکھنا ضروری ہے۔

  • 1
  • 2
  • اگلا صفحہ:
  • 3
  • 4
  • 5

اپنی رائے یہاں لکھیئے:-

comments