نشے کا تسلسل اور عادی شخصیت

2

عام طور پر شراب نوشی کرنے والے افراد اپنے کپڑوں اور صفائی ستھرائی کا خیال کیے بغیر دن رات شراب پیتے ہیں۔ وہ کبھی شراب نوشی ترک نہیں کرتے اور نہ ہی وہ کبھی نشہ چھوڑتے ہیں۔ عام طور پر اس طرح کی شراب نوشی کو سمجھ بوجھ کر کرنے والی شراب نوشی کہا جاتا ہے جو کہ آپ کی طلب کو پورا کر رہی ہوتی ہے جو آپ کے جسم کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ آپ اپنے کام کر سکیں۔ آپ میں سے بہت سے اس معیار کو برقرار رکھنے کی ناکام کوشش کرتے ہیں مگر انہیں علم نہیں ہوتا کہ یہ کیسے کروں۔ ایک دائمی شراب نوشی اور ایک بتدریج کم تر شراب نوشی کے ساتھ ایک سائیکلیل شراب نوشی بھی ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جو دن بھر شراب نوشی نہیں کرتے مگر رات کے پہر میں ایک یا زائد بوتل پیتے ہیں۔

پاکستان میں الکوحلزم کے موضوع پر ڈاکٹر صداقت علی کا خصوصی پروگرام دیکھیئے۔

اس کے علاوہ ایک بینج ڈرنکر بھی ہیں جو شراب نوشی کسی خاص موقع یا صرف ہفتہ وار ایک دن کرتے ہیں۔ ایسے افراد پورا ہفتہ صاف رہتے ہیں مگر پھر ہفتے کے آخر میں ان پر شراب نوشی کا مرحلہ حاوی ہو جاتا ہے۔ کچھ بینج ڈرنکر کو بلیک آؤٹ ڈرنکر بھی کہا جاتا ہے۔ یہ ایک ایسی سٹیج ہے جس میں ایک ایسا مرحلہ آ جاتا ہے جس میں آپ شراب نوشی کی وجہ سے اپنے پیروں پر کھڑے بھی نہیں ہو سکتے ہیں۔ وہ بظاہر ٹھیک معلوم ہوتے ہیں مگر حقیقت میں انہیں یہ بالکل احساس تک نہیں ہوتا ہے کہ ان کے ساتھ چل کیا رہا ہے اور انہیں کچھ یاد نہیں رہتا۔
addiction-willingwaystoday3
میں یہ اعتراف کرتا ہوں کہ ابھی میں شراب نوشی کے کلی سبب کو جاننے میں ناکام رہا ہوں یا یہ کہوں کہ پوری طرح سمجھ نہیں سکا۔ یہ ذہن نشین رکھنے کی ضرورت ہے کہ بلیک آؤٹ کی سٹیج ایک خاص قسم کے شراب نوشی کرنے والے فرد کے ساتھ ہوتی ہے۔ بعض اوقات یہ کسی الرجی کے باعث بھی ہو سکتی ہے۔ میں کالج کی ایسی خاتون کو جانتا ہوں جو ایک یا دو بئیر کے بعد بلیک آؤٹ میں چلی جاتی تھی۔ یہ ایک انتہائی خطرناک صورت حال ہے کیونکہ انسان کو اس کے خطرناک مراحل اور نتائج کا علم نہیں ہوتا۔

اس کے علاوہ ری ایکٹو ڈرنکر، شرائط عائد کرنے والے ڈرنکر اور بچاؤ کرنے والے ڈرنکر بھی ہوتے ہیں۔ ایک ری ایکٹو ڈرنکر خاص قسم کی جذباتی صورت حال میں ہی شراب نوشی کی طرف مائل ہوتا ہے جیسے تناؤ یا تنہائی وغیرہ۔ یہ ایسے لوگ ہوتے ہیں جو کام بھی کرتے ہیں مگر ساتھ ساتھ الکوحل کو اپنے غم بھلانے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔

ایک شرائطی ڈرنکر جب کبھی کوئی کام کرنے میں مشغول ہو جیسے کہ رات کا کھانا کھانے کے دوران یا گیم یا ٹی وی دیکھنے کے دوران ہی شراب نوشی کرتے ہیں۔

کوپینگ ڈرنکر اپنے مسائل کے حل کے لیے شراب نوشی کا سہارا لیتا ہے کیونکہ اس کو مسائل کا حل صرف شراب میں دکھائی دے رہا ہوتا ہے۔ اصل میں ابھی تک یہ تمام افراد شراب کو ایسی دوائی کے طور پر استعمال کرتے ہیں جس سے ان کے غم آسان ہو سکیں۔ کوپینگ ڈرنکر، ری ایکٹو ڈرنکر سے مختلف اس لیے ہوتا ہے کیونکہ وہ شراب کا استعمال ایک خاص قسم کے مسئلے کی وجہ سے کرتا ہے نہ کہ کسی خاص سوچ کے ساتھ۔

مثال کے طور پر میرے پاس ایک مریض تھا جو چودہ سالوں سے ریکوری میں تھا۔ اس کے والد کا انتقال ALS کی وجہ سے ہو گیا اور ان سے ملنے سے پہلے اس نے کچھ بوتلیں بئیر کی پی لیں۔ اس کے دو مہینے کے بعد اس نے پینا چھوڑ دیا اور اب وہ پانچ سالوں سے سوبر ہے۔ کیا اس نے اسے پکڑا اور پھر چھوڑ دیا؟ تو یقیناً ایسا کہنا غلط نہ ہو گا کیونکہ اس کی شراب نوشی کی وجہ حادثاتی تھی اور اس نے کسی خاص سوچ کے رد عمل میں آ کر شراب نوشی کی تاکہ اس کا تناؤ اور پریشانی کم ہو سکے۔

ہم نے بہت سارے علتی سٹائل معلوم کیے ہیں اور اب ہمیں دوبارہ سے نشے کے بارے میں سوچنے کی ضرورت ہے مگر اس بار شراب نوشی کی زبان کو استعمال کرتے ہوئے ایسا کریں گے۔

الکوحلک: یہ ایسے افراد ہیں جو ایک خاص قسم کے پیٹرن پر عمل پیرا ہوتے ہیں اور ایسے افراد میں یہ قابلیت موجود ہوتی ہے کہ وہ اپنے کام دن بھر آرام سے کر سکیں جبکہ اس کے علاوہ باقی اقسام کے الکوحلک اپنے اپنے روزمرہ کے کام کاج سرانجام دینے میں ناکام رہتے ہیں۔

  • 1
  • 2
  • اگلا صفحہ:
  • 3

اپنی رائے یہاں لکھیئے:-

comments