زندگی کے 6 اہم فیصلے جو آپ کبھی بھی کریں گے

2

اس بات کو سمجھنے کے لئے ہمیں زندگی آگے جانے کی ضرورت نہیں صرف ان لوگوں کو دیکھ لیں جن کی میزبانی جیل کرتی ہے یا جنہوں نے اپنی زندگی میں خراب فیصلے کئے تھے۔ اسی طرح فیصلہ کرنے کے لمحات میں درست فیصلہ نہ کر پانا بھی انسان کو ناکامی کی طرف لے جاتا ہے۔

سکول: تمام اہم فیصلوں میں سے ایک اہم فیصلہ سکول کے بارے میں ہے۔ یہ فیصلہ اتنا اہم کیوں ہے؟ یہ اس لئے اتنا اہم ہے کہ ایک اچھا سکول انسان کو آگے بڑھنے کے روشن مواقع مہیا کر سکتا ہے اور ایک بُرا سکول اس پر کامیابی کے دروازے بند کر سکتا ہے۔ اِس کے لئے پڑھائی کے متعلق امیدیں اور اُن کی وجہ سے ہونے والا دباؤ اور امیدوں کو پورا کرنے کا پریشر، یہ سب مل کر اسے ایک اہم فیصلہ بنا دیتے ہیں۔ یہ کسی بھی انسان میں ایسا جذبہ پیدا کر سکتا ہے کہ وہ پڑھائی میں آگے نکلے، کامیاب ہو، تاکہ اس میں پیسہ کمانے کی صلاحیت بھی مزید بہتر ہو۔ سکول سے متعلق فیصلہ لیتے وقت اس بات کا جائزہ لینا ضروری ہے کہ سکول کو بیچ میں چھوڑ دینے سے مستقبل میں کیا کیا خرابیاں پیدا ہو سکتی ہیں۔ یہ لوگوں میں پڑھائی میں کامیاب ہونے کا جذبہ پیدا کرتی ہے تاکہ وہ اپنی پڑھائی سے منسلک کمزوریوں سے نمٹ سکیں اور اپنے اندر موجود صلاحیتوں کو پہچان سکیں۔

کام: کام کے متعلق لیا گیا فیصلہ نہایت ضروری کردار ادا کرتا ہے۔ کوئی ایک خاص شعبہ یا کام کی لائن مستقبل کا فیصلہ کرتا ہے۔ اپنی صلاحیتوں کا ایک حقیقی جائزہ کسی بھی انسان کو اس کے کام میں ناکام یا کامیاب بنا سکتا ہے۔ اگر وہ اپنی صلاحیت کے برعکس کام چنیں گے تو تباہی اور ناکامی کو خوش آمدید کریں گے۔

دوست: کچھ لوگ بہت سوشل ہوتے ہیں اور آسانی سے دوست بنا لیتے لیکن بہت سے دوسرے لوگوں کے لئے یہ بہت مشکل کام ہوتا ہے اور اگر کوئی شخص کسی نئے ماحول میں ایڈجسٹ ہونے کی کوشش کر رہا ہو تو یہ مزید مشکل ہو جاتا ہے۔ ہم میں سے بہت لوگ اس بات کا تجربہ رکھتے ہیں کہ جب ہم کسی سے دوستی کی شدید خواہش رکھتے ہیں اور کسی سے بھی دوستی کے لئے تیار ہوتے ہیں، حالانکہ اگر وہ ہم پر برا اثر بھی ڈالتے ہوں۔ یہ کہا جاتا ہے کہ ہم جن لوگوں کے ساتھ زیادہ وقت گزارتے ہیں اُن جیسے ہی بن جاتے ہیں اور یہ لوگ ہماری ترقی اور کامیابی کی حدود کا معیار طے کرتے ہیں۔ یہ فیصلہ سکھاتا ہے کہ کیسے اس طرح کے دباؤ کو برداشت کرنا ہے جب آپ کے کم دوست ہوں اور آپ پر زیادہ دوست بنانے کا دباؤ ڈالا جائے تو اس وقت کیسے اچھے دوستوں کا انتخاب کیا جائے۔
decisions-2
والدین: والدین کے بارے میں ہمارے نظریات پوری زندگی بدلتے رہتے ہیں۔ بچپن میں ہم ان کو نگران کے طور پر لیتے ہیں اور اندر کہیں ہم ان کے طور طریقوں میں غلطیاں نکالتے ہیں اور اچانک ہمیں ان کا ہونا شرمندہ کرنے لگتا ہے۔ تاہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ہمیں ان کی باتوں کی سمجھ آنے لگتی ہے۔ حتیٰ کہ ہمارے دوست احباب بھی ہمارے والدین کی مثبت باتیں ہمیں بتانے لگتے ہیں۔ اس لئے والدین کے ساتھ ہمارے تعلقات کسی معیار کے ہیںیہ نہایت اہم فیصلہ ہے اور سکھاتا ہے کہ ہمیں کیسے ان کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے ہیں اور ان کے مزاج کو بہتر بنانا ہے، جب وہ اُداس ہوں اور کیسے ان کے ساتھ ہوئی تلخ کلامی کو برداشت کرنا ہے۔

ڈیٹنگ: ایسے تمام معاملات میں لوگ زیادہ تر شرم محسوس کرتے ہیں۔ والدین بھی اس معاملے میں کوتاہی کرتے ہیں اور بچوں کو اس سلسلے میں مکمل معلومات دینے سے کتراتے ہیں اور ججھک محسوس کرتے ہیں۔ حالانکہ وقت بہت بدل گیا ہے اور لوگ اب پہلے سے زیادہ آگاہی رکھتے ہیں کہ کون لوگ ان کے لئے درست ہیں اور کون نہیں۔۔۔ تاہم اگر لوگ اس بارے میں اپنی کوئی ترجیحات نہیں رکھتے کہ ان کو کس کے ساتھ نزدیکی تعلقات بنانے ہیں تو دوسرے لوگ ان کے لئے فیصلہ لیتے ہیں۔ ان معاملات میں فیصلہ لینا ان تمام مسائل پر توجہ دلاتا ہے جیسا کہ اپنے ساتھی پر اپنی زندگی کا دارومدار رکھنا، سمجھداری سے رشتہ نبھانا اور رشتے میں پائی جانے والی خرابیوں کی نشاندہی کرنا۔

ایڈکشن: لوگ مختلف رویوں اور نشے کی لت میں کسی نہ کسی طرح مبتلا رہتے ہیں۔ بہت سے لوگ ہر سال اس لت میں پھنستے ہیں اور اپنے سامنے اپنی زندگیوں کو تباہ ہوتا دیکھتے ہیں۔ آج کل بہت سے ذرائع ان تمام ایڈکشنز کو زیادہ پرکشش بنا کر پیش کرتے ہیں۔ مسائل! جیسا کہ دوستوں کا دباؤ اور نئے نئے تجربات کرنے کی خواہش اور ان کو مزید پیچیدہ بنانے میں انٹرنیٹ کا بے جا استعمال بھی شامل ہے۔ یہ بات بہت واضح ہے کہ اس معاملے کے بارے میں لئے گئے فیصلے ہماری زندگی کی سمت واضح کرتے ہیں۔ اس کے متعلق فیصلہ ہمیں سکھاتا ہے کہ کیسے یہ نشہ ہماری زندگی کا زاویہ ہی بدل کر رکھ دے گا۔

ذاتی اہمیت/خودداری: اگر ہماری ذاتی اہمیت کسی دوسری چیز میں منحصر کرنے لگ جائے تو یہ تباہی کے سفر کی طرف آغاز ہے۔ خود کو پسند کرنا اور اچھی ذاتی اہمیت رکھنا، ایک اہم فیصلہ ہے جو ہمیں سیکھنے کی ضرورت ہے۔ خود کو ایک تحفظ دینا اور اندر سے یہ تحفظ ہونا اس بات کی نشاندہی ہے کہ ہم اچھی ذاتی اہمیت کے مالک ہیں۔ یہ پروگرام سکھاتا ہے کہ کیسے حقیقی ذاتی مشاہدہ بنایا جاتا ہے اور دوسرے کی رائے کے مطابق خود کو دیکھنا کن مشکلات کا باعث بن سکتا ہے۔ یہ سب جان لینا بہت لازمی ہے اور یہ سیکھ لینا کہ ہم انفرادی قابلیت کو کیسے بروئے کار لا سکتے ہیں۔

ان تمام فیصلوں کے بارے میں ایک واضح نظریہ کسی بھی انسان کی ترقی کا ضامن ہو سکتا ہے۔ ایسی زندگی جس میں کار آمد اور کامیاب انسان کی جھلک ہو۔

اپنی رائے یہاں لکھیئے:-

comments